کٹ گاڑیوں کےخلاف کاروائی قابل قبول نہیں، رجسٹریشن میں شامل کئے جائیں/مولانا عبدالاکبر چترالی

پشاور(نامہ نگار) چترال سے سابق رکن قومی اسمبلی و جماعت اسلامی کے مرکزی راہنما ء مولانا عبدالاکبر چترالی نے حکومت کی طرف سے کٹ گاڑیوں کے خلاف کاروائی کو مسترد کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ کٹ گاڑیوں کے خلاف کاروائی سے پہلے حکومت یہ معلوم کرے کہ کٹ گاڑیاں کہاں بنی اور کہاں سے سپلائی ہوئی۔ یہاں جاری کئے گئے اپنے ایک اخباری بیان میں مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہا کہ پورے ملاکنڈ ڈویژن میں کئی سالوں سے یہ کاروبار جاری وساری تھا لیکن حکومت کو کانوں کان خبر نہیں ہوئی،حکومت اپنی غلطی چھپانے کے لئے کٹ گاڑیوں کے خلاف کاروائی کرنے جارہی ہے جو کہ غریب گاڑی مالکان کے ساتھ سراسر ظلم وناانصافی ہے جنہوں نے اپنی زمینیں فروخت کرکے حلال روزی کمانے اور اپنے بچوں کا پیٹ پالنے کیلئے لے رکھی ہیں۔تمام کٹ گاڑیوں کی رجسٹریشن کرکے ان کو نمبر دے دیے جائیں بصورت دیگر ہم ملاکنڈ ڈویژن کی تمام ٹرانسپورٹ یونین کو ساتھ ملا کر حکومت کے خلاف تحریک چلائیں گے۔اُنہوں نے کہا کہ عام لوگوں کیلئے کٹ اور غیر کٹ گاڑی کا پتا لگانا یا معلوم کرنا مشکل ہی نہیں بلکہ ناممکن بھی ہے ایسے حالات میں کٹ گاڑیوں کے خلاف کاروائی کرنا حکومت کی نااہلی اور عوام الناس پر ظلم عظیم ہے جسے ہم کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کرسکتے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں